Imagine By John Lennon with Urdu Translation

0

Imagine By

سوچو کوئی بہشت نہ ہو، قدموں تلے دوزخ نہ ہو، ہم سب آج میں زندہ ہوں۔
سوچو کوئی ملک نہ ہو، مرنے مارنے کا سبب نہ ہو، مذہب بھی نہ ہو، سب پرامن رہ رہے ہوں۔
سوچو کوئی ملکیت نہ ہو، نہ لالچ ہو نہ بھوک، بس بھائی چارہ ہو اور اس دنیا کے سب حصے دار ہوں۔
تم شاید کہو کہ میں خواب پسند ہوں، پر میں ایسا تنہا تو نہیں، شاید ایک روز تم بھی میری طرح سوچو اور یہ دنیا یک جان ہو جائے۔

ستر کی دہائی کے مشہور گلوکار جان لینن کو بیسویں صدی کا سب سے مشہور متاثر کن اور متنازعہ گلوکار مانا جاتا ہے۔ ان کی موسیقی اور گانوں نے صرف مغرب میں ہی نہیں بلکہ دنیا کے ہر کونے میں کئی نسلوں پر گہرا اثر چھوڑا ہے۔ ان کا سب سے زیادہ مشہور گانا ’امیجن‘ بیسویں صدی کے سو مقبول ترین گیتوں میں شامل ہے، گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ نے اسے ہر دور کے پانچ سو سدا بہار گانوں کی فہرست میں شامل کر رکھا ہے لیکن اس گانے کو قدامت پرست تب بھی متنازعہ سمجھتے تھے اور اج بھی فن اور ادب سے ناشنا قدامت پرست جان لینن پر تنقید کرتے ہوئے کہتے ہیں کہ جان لینن کا گیت “امیجن” دراصل الحاد کی تبلیغ ہے۔
افسوس امن کی آواز جان لینن کو 1980 میں ان کے ایک جنونی مداح نے گولی مار کر ہلاک کردیا تھا۔

سورس